Pakistan  |  International  |  Business  |  Sports  |  Showbiz  |  Technology  |  Health  |  Wonder  |  Weather  |  Columns

گزشتہ مالی سال 927 ارب روپے کے زرعی قرضے تقسیم

رواں سال کی تقسیم پچھلے سال کی 704.5 ارب روپے کی تقسیم سے 38.1 فیصد زیادہ ہے۔ فوٹو : اے ایف پی

رواں سال کی تقسیم پچھلے سال کی 704.5 ارب روپے کی تقسیم سے 38.1 فیصد زیادہ ہے۔ فوٹو : اے ایف پی

 کراچی: اسٹیٹ بینک کے مطابق گزشتہ مالی سال 2017-18 میں بینکوں نے 72.6 ارب روپے کے زرعی قرضے تقسیم کیے۔

رواں سال کی تقسیم پچھلے سال کی 704.5 ارب روپے کی تقسیم سے 38.1 فیصد زیادہ ہے۔ مزید یہ کہ جون 2018 کے آخر میں زرعی واجب الادا پورٹ فولیو بڑھ کر 469.4 ارب روپے ہوگیا جو پچھلے سال کے 405.8 ارب روپے کے مقابلے میں 15.7 فیصد کی نمو ظاہر کرتا ہے۔ اسی طرح جون 2018کے آخر میں زرعی قرضے کی رسائی گزشتہ سال کے 3.27 ملین کاشتکاروں سے بڑھ کر 3.72 ملین کاشتکاروں پر محیط ہوگئی جو 13.8 فیصد کی نمو کو ظاہر کرتی ہے۔

حقیقی شعبے کے مختلف چیلنجوں جیسے پانی کی قلت، مکئی اور گندم کی کم پیداوار، زرعی پیداوار کی قیمتوں کے اتار چڑھاؤ اور پیداوار کی بلند لاگت کے پیش نظر زرعی قرضے کی تقسیم مشکل عمل تھا، تاہم اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے زرعی قرضے کی تقسیم کے ہدف کو حاصل کرنے اور حکومت کے متعین کردہ بجٹ کے مختلف اقدامات پر عملدرآمد کے حوالے سے مربوط کوششیں کیں۔

ان کوششوں میں زرعی قرض دینے والے اداروں کے لیے سازگار ماحول کی فراہمی، بینکوں کو زرعی فنانسنگ کو قابل عمل کاروبار کے طور پر اختیار کرنے کے حوالے سے آمادہ کرنے، فنانسنگ کے نئے شعبے دریافت کرنے، ویلیو چین فنانسنگ، قرضے کی ڈجیٹائزیشن، ویئر ہاؤس رسیٹ فنانسنگ اور چھوٹے اور محروم کاشتکاروں کے لیے کریڈٹ گارنٹی اسکیم پر عملدرآمد وغیرہ شامل ہیں۔


News Source

گزشتہ مالی سال 927 ارب روپے کے زرعی قرضے تقسیم

تبصرہ کریں