Pakistan  |  International  |  Business  |  Sports  |  Showbiz  |  Technology  |  Health  |  Wonder  |  Weather  |  Columns

ہلیری کی ٹیم کا ایف بی آئی پر ’دوہرے معیار‘ کا الزام

[ad_1]

کومے اور مسز کلنٹنImage copyright
AP

Image caption

مسز کلنٹن کے حامیوں نے کومے کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے

امریکہ میں آئندہ ہفتے ہونے والے صدارتی انتخابات سے قبل ہلیری کلنٹن کی مہم نے امریکی تفتیشی ادارے ایف بی آئی کے ڈائریکٹر کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

کلنٹن کی انتخابی مہم نے ہلیری کلنٹن کی ای میل کے استعمال کے متعلق نئی تحقیقات پر ایف بی آئی کے ڈائریکٹر جیمز کومی پر دوہرے معیار برتنے کا الزام لگایا ہے۔

یہ بیان اس وقت سامنے آیا جب امریکی میڈیا کے مطابق جیمز کومی نے برملا روس پر امریکی انتخابات میں مداخلت اور مبینہ ای میل ہیکنگ کا الزام لگایا ہے۔

ہلیری کی ای میلز کی تحقیقات: ‘ایف بی آئی چیف نے تجاویز کو نظر انداز کیا’

ہلیری پر اعتماد، ‘نئئ تحقیقات سے حقائق تبدیل نہیں ہوں گے’

ایف بی آئي نے اس معاملے پر بی بی سی کو معلومات فراہم کرنے سے انکار کر دیا ہے۔

اس سے قبل ہوم لینڈ سکیورٹی اور ڈائریکٹر آف انٹیلیجنس کے شعبے نے اکتوبر میں ایک بیان جاری کیا تھا۔

بیان میں کہا گیا کہ: امریکی انٹیلیجنس برادری پراعتماد ہے کہ روسی حکومت نے حال میں امریکی سیاسی تنظیموں، افراد اور اداروں کے ای میلز کو ہیک کرنے کی بات کہی ہے۔ یہ چوریاں اور افشائے راز امریکہ کے انتخابی عمل میں مداخلت ہے۔

اس بیان کو مسٹر کومی نے مبینہ طور پر مسترد نہیں کیا تھا۔

Image copyright
AP

Image caption

ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ ‘یہ ای میلز کی بہت بڑی تعداد ہے۔ میرے خیال میں وہ 33 ہزار ای میلز مل جائیں گی جو لاپتہ تھیں’

امریکی میڈیا کے مطابق مسٹر کومی اس بیان سے اتفاق کرتے تھے لیکن وہ اسے انتخابات سے قبل جاری کرنے کے خلاف تھے۔

یہ الزامات لگائے جاتے ہیں کہ روسی ہیکروں نے ڈیموکریٹس کو نشانہ بنایا ہے تاکہ انتخابات کو ڈونلڈ ٹرمپ کے حق میں موڑ سکے۔

ہلیری کلنٹن مہم کے منیجر روبی موک نے کہا کہ اسے کسی بھی طرح دوہرے معیار سے مختلف نہیں دیکھا جا سکتا ہے۔

انھوں نے مسٹر کومی سے اپیل کی کہ وہ اس دوہرے معیار کی فوری وضاحت کریں اور اسی طرح کے معیار ٹرمپ کے ساتھیوں کے ساتھ اپنائيں۔

مسٹر کومی پر انتخابات سے صرف 11 دن قبل ہلیری کلنٹن کی ای میلز سے متعءق نئی تحقیقات کے اعلان پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

خیال رہے کہ مارچ سنہ 2015 میں یہ ثابت ہوا تھا کہ ہلیری کلنٹن نے اپنی وزارتِ خارجہ کے دور میں ذاتی ای میل اکاؤنٹ کا استعمال کرکے وفاقی قانون کی خلاف ورزی ہے۔

مسٹر کومی نے جولائی میں کہا تھا کہ مسز کلنٹن رازداری کی معلومات کے بارے میں بہت لاپروا ثابت ہوئی ہیں تاہم ان کے خلاف کسی مقدمے کا کوئی جواز نہیں ہے۔

Image copyright
AFP

Image caption

ہیری ریڈ نے ایف بی آئی کے ڈائریکٹر جیمز کومے پر ایکٹ کی خلاف ورزی کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایکٹ حکام کو انتخابات میں اثر انداز ہونے سے روکتا ہے

ایف بی آئی نے سابق امریکی وزیرِ خارجہ کی نائب ہما عابدین کی ای میلز تلاش کرنے کے لیے وارنٹ حاصل کیے تھے۔

یہ خیال ظاہر کیا جاتا ہے کہ ہیلری کلنٹن سے متعلق یہ ای میلز ہما عابدین کے سابق شوہر اینتھونی وینر کے لیپ ٹاپ سے ملی تھیں۔

ایف بی آئی کو یقین ہے کہ ہلیری کلنٹن جو اس وقت امریکی وزیرِ خارجہ تھیں، کے نجی سرور پر حساس معلومات موجود تھیں۔

[ad_2]

تبصرہ کریں