Pakistan  |  International  |  Business  |  Sports  |  Showbiz  |  Technology  |  Health  |  Wonder  |  Weather  |  Columns

کلبھوشن کیس میں پاکستان نے دوبارہ سماعت کی درخواست دیدی


فوجی کارروائی میں مداخلت غیر آئینی ہے، چند روز میں اپنا وکیل پیش کرینگے، موقف۔ فوٹو : فائل

فوجی کارروائی میں مداخلت غیر آئینی ہے، چند روز میں اپنا وکیل پیش کرینگے، موقف۔ فوٹو : فائل

 اسلام آباد / نیویارک:  یو این او کی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے عالمی عدالت ِ انصاف میں بھارتی خفیہ جاسوس کلبھوشن یادیو کی سزا روکنے پر فریق بننے کا فیصلہ کرلیا ہے جبکہ پاکستان نے 6 ہفتوں میں دوبارہ سماعت کی درخواست دیدی۔

ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا گیا ہے کہ پاکستان نے کلبھوشن کیس کیخلاف عالمی عدالت انصاف میں 6 ہفتوں میں دوبارہ سماعت کی درخواست دیدی ہے، جس میں کلبھوشن میں عالمی عدالت انصاف کے دائرہ سماعت کو دوبارہ چلینج کیا جائیگا جبکہ ذرائع کیمطابق پاکستان کا کہنا ہے کہ وہ عالمی عدالت میں اپنا وکیل نہیں بدلے گا اور خاور قریشی ہی پیش ہوں گے۔

مزید برآں کلبھوشن کے پاس اپنی سزائے موت کو اپیلٹ کورٹ میں چیلنج کرنے کاکل آخری دن ہے۔ کلبھوشن کو10 اپریل کو سزائے موت سنائی گئی تھی۔ قانون کے تحت 40 روز میں سزائے موت کو چیلنج کیا جا سکتا ہے۔ اپیلٹ کورٹ کے فیصلے کے بعد 60 روز میں کلبھوشن آرمی چیف سے اپیل کر سکتا ہے تاہم آرمی چیف کے فیصلے کے بعد90 روز کے اندر کلبھوشن صدر پاکستان سے اپیل کر سکتا ہے۔

پاکستان نے کلبھوشن کے معاملے کی جلد سماعت کیلیے عالمی عدالت انصاف کولکھے خط میں کہا ہے کہ بھارتی جاسوس کے معاملے کی ترجیحی بنیادوں پرسماعت کی جائے، یہ بھی کہاگیا کہ پاکستان اب بھی عالمی عدالت کے اختیار سماعت کوقبول نہیں کرتا ہے۔

دوسری جانب اٹارنی جنرل اشتراوصاف نے ایک نیوزچینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ سماعت کے دوران عدالت کے دائرہ اختیارکے نکتے کو پھر اٹھایا جائیگا۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل نے کلبھوشن یادو کیس میں عالمی عدالت انصاف کی طرف سے سزا روکنے کیخلاف فریق بننے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

میڈیا رپورٹ کیمطابق عالمی عدالت انصاف نے اِس سے قبل بھارت میں اجمل قصاب جس کا بھارتی عدالت نے خود اقرار کیا کہ بے گناہ پھانسی دی گئی ہے جبکہ حریت رہنما افضل گورو سمیت امریکا میں قید عافیہ صدیقی کو عالمی عدالت ِ انصاف نے انصاف کیوں نہیں دیا؟

عالمی عدالت انصاف نے جنوبی ایشیاکے سب سے بڑے ایشومسئلہ کشمیرکا کیس لڑنے کے بجائے حاضر سروس بھارتی کرنل کلبھوشن یادیوجِس نے میڈیا کے سامنے خود اپنے گناہ قبول کیے کہ وہاں وہ پاکستان کی مظلوم عوام کے قتل میں ملوث ہے پرکیوں ترجیح دی۔ عالمی عدالت ِ انصاف کا کلبھوشن یادیوکی پھانسی کو40 دِن تک روکنا سمجھ سے بالاتر ہے۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل نے اِس بارے فریق بننے کا فیصلہ کر لیا ہے اورآئندہ چند روز میں عالمی عدالت ِ انصاف سے باقاعدہ رجوع کرنے کے بعد اپنا وکیل پیش کریں گے۔

علاوہ ازیں ایمنسٹی انٹرنیشنل نے عالمی عدالت ِ انصاف سے رجوع کرنے کیلیے باقاعدہ مکتوب ارسال کر دیا جبکہ رولز اور لاکے مطابق کلبھوشن یادیو کا پاکستان فوج نے گرفتار کر کے فوجی عدالت نے سزائے موت دی جبکہ اْس کا فیصلہ بھی پاکستان فوج کے قانون کیمطابق ہونا چاہیے۔ عالمی عدالت ِ انصاف کی فوجی کارروائی میں مداخلت غیرآئینی ہے جس کی شدید مذمت بھی کرتے ہیں۔

تبصرہ کریں