Pakistan  |  International  |  Business  |  Sports  |  Showbiz  |  Technology  |  Health  |  Wonder  |  Weather  |  Columns

مقتول- سو لفظوں کی کہانی- مبشر علی زیدی

’’ہمارے قبیلے کی دوسرے قبیلے سے دشمنی تھی۔

انہوں نے مجھے اغوا کیا اور گلا گھونٹ کے قتل کر دیا۔‘‘
قبرستان کے نئے مکین نے بتایا۔

’’میں پولیس اہل کار تھا۔

ایک دن جرائم پیشہ افراد کے ٹھکانے پر چھاپا مارا۔
فائرنگ کا تبادلہ ہوا۔

میں ڈاکوؤں کی فائرنگ سے جاں بحق ہوا۔‘‘
ایک اور مُردے نے حال سنایا۔

تیسرے کے چہرے پر الجھن کے آثار تھے۔
اس نے تھکی تھکی آواز میں کہا،

خوش قسمت ہو کہ اپنے قاتلوں کو جانتے ہو۔
مجھے نہ قاتل کا پتا ہے، نہ قتل کی وجہ،

میں ایک دھماکے میں مارا گیا تھا۔‘‘


Source

مقتول- سو لفظوں کی کہانی- مبشر علی زیدی