Pakistan  |  International  |  Business  |  Sports  |  Showbiz  |  Technology  |  Health  |  Wonder  |  Weather  |  Columns

فضائی میزبانوں کے ذریعے منشیات سمگلنگ کرنے والا گینگ

فضائی عملہتصویر کے کاپی رائٹ
Getty Images

Image caption

آسٹریلین فیڈیرل پولیس کے اسسٹنٹ کمشنر ٹیس والش نے بتایا کہ فضائی عملے کو’ڈرگز کوریر’ کے طور پر استعمال کیا جارہا تھا۔

آسٹریلوی پولیس نے منشیات کی سمگلنگ کے ایک ایسے گینگ کو پکڑا ہے جو کہ مبینہ طور پر ڈرگز کی سمگلنگ کے لیے فضائی میزبانوں کو استعمال کرتا آیا ہے۔

ملک کے وفاقی تحقیقاتی ادارے آسٹریلین فیڈیرل پولیس کے مطابق میلبرن میں موجود یہ ویتنامی گینگ گزشتہ پانچ سال سے ان کارروائیوں میں ملوث ہے۔

ابھی تک آٹھ لوگوں کو ان الزامات میں گرفتار کیا گیا ہے جن میں سے ایک میلنڈو ائیر نامی ائیرلائن کا ملازم ہے۔ اس کا شمار ملائشیا کی چھوٹی ائیرلائنوں میں ہوتا ہے اور انھوں نے اپنے ملازم کی گرفتاری پر ابھی تک کوئی ردِعمل ظاہر نہیں کیا۔

جن لوگوں پر اس جرم میں مبینہ طور پر ملوث ہونے کا الزام ہے ان میں چار مرد اور چار عورتیں شامل ہیں۔ ان کے عمریں 26 سے 48 سال کے درمیان ہیں۔ ان سب پر منشیات سمگلنگ کا الزام ہے۔ پولیس نے ملزمان کی شہریت کے بارے میں کوئی معلومات نہیں دی۔

آسٹریلین بارڈر فورس کے ایک اہلکار نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ایئرلاین کا عملہ قانون کے سے بالاتر نہیں،ان پر بھی وہ قوانین لاگو ہوتے ہیں جو سب کے لیے بنائے گئے ہیں۔

گرفتار کیے گئے آٹھ لوگوں کو مئی میں میلبرن کی عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

آسٹریلین فیڈیرل پولیس کے اسسٹنٹ کمشنر ٹیس والش نے بتایا کہ فضائی عملے کو’ڈرگز کوریر’ کے طور پر استعمال کیا جارہا تھا۔

‘ یہ لوگ زیاتہ تر میلبرن اور سڈنی کے راستے آسٹریلیا میں داخل ہورہے تھے۔

میلینڈو ائیر کا شمار ملائشیا کی چھوٹی ائیرلائنوں میں ہوتا ہے۔ اس نے اپنی سروس 2013 میں شروع کی اور ان کا بیس کوالا لمپور ہے۔

میلینڈو ائیر اپنے صارفین کو ایک ہفتے کے اندر چالیس ممالک میں آٹھ سو سے زیادہ پروازوں کی سروس فرہام کرتی ہے۔


News Source

فضائی میزبانوں کے ذریعے منشیات سمگلنگ کرنے والا گینگ