Pakistan  |  International  |  Business  |  Sports  |  Showbiz  |  Technology  |  Health  |  Wonder  |  Weather  |  Columns

کمیونٹی اسکول ٹیچرز کی تنخواہوں کے لیے 4 ارب روپے کی منظوری

اسلام آباد: ایگزیکٹو کمیٹی برائے قومی اقتصادی کونسل (ایکنک) نے غریب بچوں کو بنیادی تعلیم دینے والے کمیونٹی اسکول کے 12 ہزار 175 اساتذہ کے واجبات ادا کرنے اور تنخواہوں کو جاری کرنے کے لیے 4 ارب 5 کروڑ 80 لاکھ روپے کی منظوری دے دی۔

وزیر خزانہ اسد عمر کی سربراہی میں ایکنک کے اجلاس میں ان اسکولوں کے کام کرنے کے طریقہ کار پر طویل بحث ہوئی جس کے بعد واجبات اور رواں مالی سال کے پہلے 6 ماہ کے اخراجات کو پورا کرنے کے لیے منظوری دی گئی۔

مزید پڑھیں: حکومت نے 660 ارب روپے کے منصوبوں کی منظوری دے دی

غیر روایتی بنیادی تعلیمی نظام کے اس منصوبے میں کمیونٹی کی جانب سے اسکول کے لیے جگہ دی جاتی ہے جبکہ ٹیچرز، یوٹلیٹی بلز، کتاب وغیرہ کے اخراجات کو وفاقی حکومت پورا کرتی ہے۔

ان اسکولوں میں انرولمنٹ تقریباً 4 لاکھ 63 ہزار 198 ہے جن میں سے 56 فیصد تعداد لڑکیوں کی ہے۔

ان اسکولوں میں ایک ٹیچر ہی تمام کلاسز کی ذمہ دار ہوتا ہے جو روایتی اسکول کے نصاب کو پڑھاتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ڈیم فنڈ کی مہم میں میڈیا کا بہت بڑا کردار ہے، چیف جسٹس

1995 میں 5 سالوں کے لیے تیار کیا گیا یہ منصوبہ آج بھی ان علاقوں میں جاری ہے جہاں روایتی اسکول موجود نہیں۔

کمیونٹی اسکولز ملک کے تقریباً تمام حصوں میں موجود ہے اور اسے سروے کرنے کے بعد جگہ کی نشاندہی پر ضرورت کے تحت کھولا جاتا ہے۔


یہ خبر ڈان اخبار میں 10 جنوری 2019 کو شائع ہوئی


News Source

کمیونٹی اسکول ٹیچرز کی تنخواہوں کے لیے 4 ارب روپے کی منظوری

تبصرہ کریں