Pakistan  |  International  |  Business  |  Sports  |  Showbiz  |  Technology  |  Health  |  Wonder  |  Weather  |  Columns

کرائسٹ چرچ حملہ: وزیر اعظم کا نعیم رشید کیلئے قومی ایوارڈ کا اعلان

وزیر اعظم عمران خان نے کرائسٹ چرچ میں مسجد پر دہشت گرد حملے کے دوران بے مثال بہادری کا مظاہرہ کرتے ہوئے جان کا نذارانہ پیش کرنے والے پاکستانی نعیم رشید کو قومی ایوارڈ دینے کا اعلان کیا ہے۔

کرائسٹ چرچ حملے کے دوران ایبٹ آباد سے تعلق رکھنے والے پاکستانی نعیم رشید جرات و بہادری کا مظاہرہ کرتے ہوئے حملہ آور کے سامنے ڈٹ گئے اور انہیں آگے جانے سے روک دیا۔

مزید پڑھیں: نیوزی لینڈ: مساجد پر حملے میں شہید پاکستانیوں کی تعداد 9 ہو گئی

ایک عینی شاہد کے مطابق اگر نعیم حملہ آور کو نہ روکتے تو حملے میں جانی نقصان کہیں زیادہ ہو سکتا تھا کیونکہ حملہ آور النور مسجد کے عین وسط میں پہنچنے کی کوشش کر رہا تھا۔

اپنی جان کی پروا نہ کرتے ہوئے بے مثال بہادری کا ثبوت دینے والے 66سالہ نعیم کو سوشل میڈیا پر خراج تحسین پیش کیا جا رہا ہے۔

وزیر اعظم عمران خان نے بھی نعیم رشید کی اس لازوال بہادری اور جرات مندی پر انہیں قومی ایوارڈ دینے کا اعلان کیا ہے۔

انہوں نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ ہم کرائسٹ چرچ دہشت گرد حملے کی زد میں آنے والے پاکستانیوں کے اہل خانہ کو مکمل معاونت فراہم کرنے کے لیے تیار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کو میاں نعیم رشید پر فخر ہے جنہوں نے سفید فام دہشت گرد پر قابو پانے کی کوشش میں جام شہادت نوش کیا، انکے حوصلے کو قومی انعام کے ساتھ یادگار بنایا جائے گا۔

مذکورہ حملے میں نعیم کے ساتھ ساتھ ان کے جواں سال بیٹے طلحہ نعیم بھی شہید ہو گئے اور دفتر خارجہ کی جانب سے ان دونوں کی شہادت کی تصدیق کردیگئی ہے۔

نعیم کی والدہ 80 سال سے زائد عمر کی بییدار آپا نے حکومت پاکستان سے درخواست کی ہے کہ ان کے بیٹے اور پوتے کی آخری رسومات میں شرکت کے لیے انہیں نیوزی لینڈ جانے کے لیے ویزا جاری کیا جائے۔

نعیم رشید پیشے کے اعتبار سے بینکر تھے اور وہ 2009 میں نیوزی لینڈ گئے تھے جہاں انہوں نے مزید تعلیم حاصل کرتے ہوئے اپنا پی ایچ ڈی مکمل کیا۔

ڈاکٹر نعیم رشید کے ایبٹ آباد میں واقع گھر میں لوگ تعزیر کے لیے جمع ہیں— فوٹو: اے ایف پی

ان کی بیوی تدریس کے شعبے سے وابستہ ہیں اور طلحہ سمیت ان کے تین بیٹے مختلف اداروں میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: مساجد کے حملہ آور سے یوٹیوب کا سب سے مشہور شخص پریشان

اس ہولناک حادثے کے دن نعیم حال ہی میں انجینئرنگ مکمل کرنے والے اپنے بیٹے طلحہ نعیم کے ہمراہ مسجد گئے اور دونوں حملے کا نشانہ بن گئے۔

نعیم رشید خیبر پختونخوا اسمبلی سے مسلم لیگ ن کی سابق قانون دان آمنہ سردار کے کزن ہیں اور ایوب میڈیکل کمپلیکس کے سابق ڈائریکٹر ڈاکٹر سلیم افضل کے بھتیجے ہیں۔

نیوزی لینڈ مساجد پر حملہ

نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں جمعہ کے روز 2 مساجد النور مسجد اور لین ووڈ میں حملہ آوروں نے اس وقت داخل ہوکر فائرنگ کی تھی جب بڑی تعداد میں نمازی، نمازِ جمعہ کی ادائیگی کے لیے مسجد میں موجود تھے۔

نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا تھا کہ اس افسوسناک واقعے میں 49 افراد جاں بحق جبکہ متعدد زخمی ہوئے۔

فائرنگ کے وقت بنگلہ دیشی کرکٹ ٹیم بھی نماز کی ادائیگی کے لیے مسجد پہنچی تھی تاہم فائرنگ کی آواز سن کر بچ نکلنے میں کامیاب رہی اور واپس ہوٹل پہنچ گئی۔

مذکورہ واقعے کے بعد کرائسٹ چرچ میں بنگلہ دیش اور نیوزی لینڈ کے درمیان ہفتے کو ہونے والا تیسرا ٹیسٹ منسوخ کردیا گیا اور بعد ازاں بنگلہ دیش نے فوری طور پر نیوزی لینڈ کا دورہ ختم کرنے کا اعلان کیا۔

مزید پڑھیں: نیوزی لینڈ دہشتگردی: حملہ آور نے 24 گھنٹے قبل اپنے عزائم ظاہر کردیئے تھے

مسجد میں فائرنگ کرنے والے ایک شخص نے حملے کی لائیو ویڈیو بھی سوشل میڈیا پر نشر کی، جسے بعد میں نیوزی لینڈ حکام کی درخواست پر دل دہلا دینے والی قرار دیتے ہوئے سوشل میڈیا سے ہٹادیا گیا۔

بعد ازاں نیوزی لینڈ میں مساجد پر حملہ کرنے والے دائیں بازوں کے انتہا پسند برینٹن ٹیرنٹ کو عدالت میں پیش کیا گیا تھا جہاں ملزم پر قتل کا الزامات عائد کردیے گئے تھے۔


News Source

کرائسٹ چرچ حملہ: وزیر اعظم کا نعیم رشید کیلئے قومی ایوارڈ کا اعلان