Pakistan  |  International  |  Business  |  Sports  |  Showbiz  |  Technology  |  Health  |  Wonder  |  Weather  |  Columns

پشاور زلمی 5 وکٹ پر 214 رنز بناکر آؤٹ

پشاور زلمی نے اسلام آباد یونائٹیڈ کے خلاف پی ایس ایل سیزن فور کے دوسرے ایلیمینٹر میں اسلام آباد کو جیتنے کے لئے 215 رنز کا ہدف دیا ہے۔

جمعہ کی شام کراچی کے نیشنل اسٹیڈیم میں اسلام آباد یونائٹیڈ نے ٹاس جیت کر پہلے پشاور زلمی کو بیٹنگ کی دعوت دی تو پشاور کی اوپننگ جوڑی کامران اکمل اور امام الحق بیٹنگ کرنے آئے۔

دونوں کھلاڑی اس سے قبل ہونے والے میچ میں رنز بنانے کی رفتار تیز کرنے کے تقاضے کو سمجھ نہیں پائے تھے اس لئے آخری بیٹسمین پر زیادہ دباؤ آگیا تھا تاہم آج چار اوورز تک کامران اکمل نے 17 اور امام الحق نے 13 رنز بناکر ٹیم کے اسکور کو 32 رنز تک پہنچا دیا تھا۔

چوتھے اوور میں کامران اکمل کی رنز بنانے کی رفتار میں قدرے تیزی نظر آئی۔ انہوں نے پانچ چوکے اور ایک چھکا مارا۔ ادھر کامران کی دیکھا دیکھی امام الحق نے بھی چھکا مارا اور اسکور کو پانچ اوورز کے اختتام تک 41 رنز تک لے گئے۔ کامران کے 29 اور امام کے 20 رنز تھے۔

سات اوور کے اختتام تک پشاور کا اسکور بغیر کوئی وکٹ کھوئے 67 رنز تھا جس میں کامران اکمل کے 36 اور امام الحق کے 29 رنز شامل تھے۔

کامران اکمل آٹھویں اوور میں نصف سنچری بنانے میں کامیاب ہوگئے۔ ان کے 53 رنز میں 7 چوکے اور 3 چھکے شامل تھے جبکہ امام الحق بھی 41 رنز بناچکے تھے۔

نویں اوور تک مجموعی اسکور 105 رنز ہوگیا جس میں کامران کے 62 اور امام الحق کے 41 رنز شامل تھے۔

11 واں اوور ختم ہوا تو پشاور زلمی کا پی ایس فور کا اب تک کا ریکارڈ بن گیا۔ پشاور نے بغیر کسی نقصان کے 126 رنز بنالئے تھے۔ کامران 67 اور امام الحق 57 رنز پر کھیل رہے تھے۔

دونوں کھلاڑی اب تک مجموعی طور پر 16 چوکے اور 5 چھکے لگا چکے تھے۔

اسکور 135 رنز ہوا تو امام الحق ڈیلپورٹ کی بال پر کیچ ہوگئے جبکہ دوسرے وکٹ کے لئے اسلام آباد کو زیادہ انتظار نہیں کرنا پڑا۔ کامران اکمل 74 رنز بناکر آؤٹ ہوگئے۔ ان کی وکٹ بھی ڈیلپورٹ نے لی۔ اس وقت ٹیم کا اسکور 138 رنز تھا۔ دونوں کھلاڑی تین رنز کے فرق سے آؤٹ ہوئے تھے۔

ان دونوں کی جگہ پولاڈ اور صہیب مقصود نے لی۔ اب تک 14 اوورز کا کھیل مکمل ہوچکا تھا جبکہ اسکور 139 تھا۔

پولاڈ نے آتے ہی ہٹنگ شروع کردی۔ موقع کا تقاضہ بھی یہی تھا کہ تیز رفتاری سے زیادہ سے زیادہ اسکور بنایا جائے کیوں کہ مجموعی اسکور 15 ویں اوور میں 151 ہوگیا تھا۔ پولاڈ کے 10 اور مقصود کے چار رنز تھے۔

158 رنز کے اسکور پر مقصود بھی آؤٹ ہوگئے۔ ان کا اسکور صرف چار رنز تھا کہ شاداب خان ان کی وکٹ لے اڑے۔

اب پولاڈ اور ڈیرن سیمی کریز پر تھے اور دونوں بیٹسمین ہی تیز رفتاری سے رنز بنانے کے لئے مشہور ہیں۔ پولاڈ ابھی تک 23 رنز بناچکے تھے اور 17 واں اوور جاری تھا۔ سیمی نے 8 رنز بنائے تھے۔ اسکور 172 رنز تھا۔

18 ویں اوور تک پشاور کا اسکور تین وکٹ کے نقصان پر 183 رنز ہوگیا جس میں پولاڈ کے 32 اور سیمی کے 10 رنز شامل تھے۔

19 ویں اوور میں پشاور کو اس وقت بہت قیمتی وکٹ گنوانا پڑی جبکہ اسکور بہت تیزی سے آگے بڑھ رہا تھا کہ اسی دوران پولاڈ رن آؤٹ ہوگئے۔ انہوں نے 36 رنز بنائے تھے جبکہ ڈیرن سیمی 11 رنز پر کھیل رہے تھے اسکور چار کھلاڑیوں کے نقصان پر 190 رنز تھا۔

اگلے بیٹسمین تھے ریاض وہاب ۔ جنہوں نے ایک بال پر ایک ہی رن بنایا تھا کہ وہ رن آؤٹ ہوگئے۔ یوں پشاور کی 198 رنز پرپانچویں وکٹ گری۔ ان کی جگہ جارڈن کھیلنے آئے۔

20 ویں اور آخری اوور میں پشاور کی ٹیم 214رنز بناکر آؤٹ ہوگئی جس میں ڈیرن سیمی کے 30 رنز شامل تھے جبکہ جارڈن نے کوئی رن نہیں بنایا تھا۔ دونوں آخری تک آؤٹ نہیں ہوئے۔

اسلام آباد کی جانب سے ڈیلپورٹ نے دو اور شاداب خان نے ایک وکٹ لی۔ دو کھلاڑی رن آؤٹ ہوئے۔

کچھ ٹیموں کے بارے میں:

جو ٹیم بھی آج کا میچ جیتنے گی وہ فائنل میں پہنچ جائے گی جہاں اس کا مقابلہ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز سے ہوگا۔ کوئٹہ کوالیفائر زمیں پشاور زلمی کودس رنز سے ہارا کر فائنل میں پہنچی ہے اور اگر آج کا میچ پشاور زلمی نے ہی جیتا تو پھر مقابلہ انتہائی سخت ہونے کی امید ہے کیوں کہ دونوں ٹیمیں ایک دوسرے سے جیتنے کے لئے سرڈھڑ کی بازی لگادیں گی۔

پشاور زلمی کو اس میچ میں کامران اکمل ، امام الحق ، لیام ڈاؤ سن، پولاڈ ، ڈیرن سیمی اور مصباح الحق کی ٹبیٹنگ پر بہت حد تک منحصر رہنا ہوگا ۔اسی طرح بالرز کے طور پر اسے حسن علی، وہاب ریاض اور ملز کی مدد لینا ہوگی۔

دوسری جانب اسلام آباد یونائٹیڈ کے پاس لیوک رونکی ، ڈیلپورٹ اور پروالٹن جبکہ بالنگ میں آصف علی، فہیم اشرف، محمد سمیع اور رومان رئیس کی مہارت اور ہنر حاصل ہے۔

اسلام آباد یونائٹیڈ کی ٹیم

لیوک رونکی، کیمرون ڈلپورٹ، ایلکس ہیلز، والٹن، حسین طلعت، آصف علی، فہیم اشرف، شاداب خان، محمد سمیع، محمد موسیٰ اور رومان رئیس۔

پشاور زلمی

کامران اکمل، امام الحق، صہیب مقصود، عمر امین، جارڈن، کیرون پولاڈ، ڈیرن سیمی، وہاب ریاض، حسن علی، ملز اور سمین گل۔


News Source

پشاور زلمی 5 وکٹ پر 214 رنز بناکر آؤٹ

شناختی عنوان:,